بیس لگاؤ لیکن مہارت کے ساتھ۔۔۔

بیس ہمیشہ اپنی جلد سے ایک شیڈ گہرے رنگ کی لگائیں تاکہ وہ بلینڈنگ کے دوران چہرے کی قدرتی رنگت کے ساتھ مل جائے اور مصنوعی پن محسوس نہ ہو ۔چہرے کا قدرتی تاثر نمایاں کرنے کے لئے گردن ،ہاتھوں اور بازوؤں پر بھی بیس لگانا ضروری ہے ۔ خواتین عام طور پر بیس لگا کر رنگ گورا کرنا چاہتی ہیں جس سے چہرہ مصنوعی لگتا ہے ۔ یہ بالکل غلط ہے ۔ بیس لگانے کا مطلب ہر گز رنگ گورا کرنا نہیں ہوتا ۔ بلکہ بیس لگا کر چہرے کا تاثر متوازن رکھنا ہے ۔

ڈرائی سکن والی خواتین کو چاہیے کہ بیس لگانے سے پہلے جلد کی اچھی طرح موئسچرائزنگ کریں اور آئل بیسڈفاؤنڈیشن استعمال کریں ۔ لیکن اگر آپ کی جلد (Oil Based

آئلی ہے تو آئل فری  فاؤنڈیشن بہتر ہے چہرے پر بیس لگانے سے(Oil Free)

پہلے پرائمر بھی لگائیں اور پھر برش کی مدد سے بیس لگائیں ۔اس کے علاوہ اگر آپ لیکوڈ فاؤنڈیشن لگانا چاہتی ہیں تو اسے خشک سپنچ کے ساتھ لگا کر اچھی طرح بلینڈ کریں تاکہ جلد کی قدرتی رنگت کے ساتھ مل جائے ۔ کبھی ایسا ہوتا ہے کہ بیس لگاتے ہوئے آنکھوں کے اوپر ارد گرد کے حصوں کو چھوڑ دیا جاتا ہے جس سے چہرہ کا تاثر ایک سا نہیں رہتا ۔ ویسے بھی جب بیس کی بات کی جائے تو اس کا مطلب صرف چہرہ ہی نہیں ہوتا بلکہ گردن ،بازو ، کان اور ہاتھوں پر بھی بیس لگانا ضروری ہوتا ہے ۔ آج کل ہیوی بیس پسند نہیں کی جاتی ۔بیس ہمیشہ کم لگائیں جس سے آپ کا چہرہ حسین اور دلکش لگے گا ۔

لیکن فنکشن کی نوعیت کے مطابق میک اپ کو لائٹ یا ہیوی کیا جاسکتا ہے ۔ اگر آپ کو کسی شادی میں جانا ہے تو تینوں دن کا تاثر مختلف ہونا چاہئے ۔ مہندی پر ہلکا میک اپ کریں ،بارات پر تھوڑا زیادہ کریں اور ولیمے پر بھی ہلکا میک اپ کریں ۔ اس طرح آپ تینوں دن منفرد نظر آئیں گی ۔ پمپلز یا داغ دھبے ہوں تو انہیں چھپانے کے لئے کنسیلر لگایا جاتا ہے جس سے بیس کم استعمال ہوتی ہے ۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.